August 21, 2018

غیرمسلم کے ہاتھ کا بنا ہوا کھانا ؟

غیرمسلم کے ہاتھ کا بنا ہوا کھانا ؟

 سوال: السلام علیکم مفتی صاحب،

میں سعودیہ میں رہتاہوں،وہاں میرے روم میں ایک غیرمسلم ہندورہتاہے اوروہی کھانا بناتا ہے،تو کیا اس کے ہاتھ کا بناہواکھاناجائز ہے یا نہیں ؟

(محمد مظہر احمد)۔

جواب: وعلیکم السلام و رحمۃاللہ،

جو بھی غیرمسلم جہاں بھی رہے اگروہ اپنے ہاتھ سے وہ چیزیں بنائے جو اسلام میں حلال ہے تو اس کے ہاتھ سے پکا ہو کھانا جائز ہے کیونکہ گندگی اس کے عقیدہ میں ہے اس کے ہاتھ میں نہیں ہے،جس کی تصریح حدیث میں ملتی ہے،

(جامع الترمذی،ج/2،ص/5)