February 19, 2018

گائے پر پابندی ہو تو کیا کرے ؟

گائے پر پابندی ہو تو کیا کرے ؟

سوال: السلام علیکم مفتی صاحب،

میرا سوال یہ ھیکہ:زید سعودیہ میں رہتا ہے،اوروہ کسی بڑے جانور میں حصہ لیکر قربانی دینا چاہتا ہے مگر ان دنوں انڈیا میں گائے کے ذبح کرنے پر پابندی عائد ہوچکی ہے،تو اب اونٹ کےعلاوہ کیا کوئی دوسرےجانور میں قربانی دےسکتے ہیں ؟اس کو دلیل کی روشنی میں جواب دےکر شکریہ کا موقعہ عنایت فرمائیں ۔

(محمد امجد خان)،

جواب : وعلیکم السلام و رحمۃاللہ،

اسلام ایک آفاقی مذھب ہے،اس کے اصول اور قوانین بندوں نے نہیں بلکہ خود اللہ نے اپنے کلام مبارک میں بتائے ہیں،اور انہیں قانون الہی اور دلائل شرعیہ کی روشنی میں علمائے کرام و فقھائے اپنے اجتھاد سے عظام امت کے مسائل کو حل کرنے کی کوشش کرتے ہیں،لھذا مذکورہ سوال کے پیش نظر کہ جہاں گائے کے کاٹنے پر پابندی ہوتو ایسی صورت میں اونٹ کے علاوہ زید بھینس اور کھلگہ میں حصہ ملکر قربانی دے سکتا ہے،کیوںکہ علمائے کرام نے حدیث کی روشنی میں فرمایا ھیکہ :بھینس بھی گائے کی ہی قسم میں سے ہیں لھذا بھینس کی قربانی بھی جائز ہے۔

(البحر الرائق،ج/8،ص/201۔۔۔بدائع الصنائع ،ج/6،ص/69،موٗطا للمالک،ص/294)،

اس کے علاوہ بیل کی بھی قربانی دےسکتے ہیں کیونکہ وہ بھی گائے کے ہی جنس سے مذکر ہیں۔       (الھدایہ،ج/7،ص/169)